اسلام آباد ، 03 اکتوبر (اے پی پی ): وزیر اعظم عمران خان نے  اسلامو فوبیا کے خلاف جدو جہد کے لئے  ترکی اور ملائشیا کے اشتراک سے انگریزی ٹیلی ویژن کے قیام کا اعلان کیا   ہے ۔وزیر اعظم  پاکستان عمران خان نے کہا ہے کہ ترکی، پاکستان اور ملائیشیا اسلامو فوبیا کی پیدا کردہ مشکلات کے خلاف جدوجہد کے لئے ایک مشترکہ انگریزی ٹیلی ویژن چینل کا آغاز کریں گے۔

اقوام متحدہ کے 74 ویں جنرل کمیٹی اجلاس کے دائرہ کار میں ترکی کے صدر رجب طیب اردگان ، ملائیشیا کے وزیر اعظم مہاتیر  محمد اور پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے سہ فریقی ملاقات کی۔اجلاس سے متعلق اپنے سوشل میڈیا پیج سے جاری کردہ بیان میں  وزیر اعظم نے کہا ہے کہ آج صدر اردگان اور وزیر اعظم مہاتیر  کے ساتھ میری ملاقات میں تین ممالک کی حیثیت سے ہم نے اسلامو فوبیا کے خلاف جدوجہد  اور اپنے عظیم دین اسلام کے بارے میں غلط فہمیوں کے ازالے کے لئے ایک مشترکہ انگریزی ٹیلی ویژن چینل کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ایسی تمام غلط فہمیاں جو لوگوں کو مسلمانوں کے خلاف یکجا کرتی ہیں، ان کا ازالہ کیا جائےگا۔انہوں نے کہا ہے کہ توہین اسلام کے مسئلے کو اس طریقے سے بیان کیا جائے گا کہ  انسانوں کو معلومات فراہم کرنے  اور   اسلام سے   متعلق آگاہی پیدا کرنےکے لئے اسلامی تاریخ  پر مبنی  فلمیں اور ڈرامے بنائے جائیں گے۔ اس طرح مسلمانوں سے مخصوص  ایک میڈیا  کا قیام عمل میں آئے گا۔

مذہبی اسکالرز اور علماء کرام نے وزیر اعظم کے اس اقدام کو سراہتے ہوئے کہا کہ آج مسلم اُمہ کو جن مسائل کا سامنا ہے اس کے لئے تمام مسلم برادری کو مل کر جدو جہد کرنی ہوگی جس کا آغاز وزیر اعظم پاکستان نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے اپنے پہلے خطاب کے دوران کر دیا ہے۔ اسلامو فوبیا کے خلاف ایک مشترکہ جدوجہد جیسے عظم مقصد کو نا صرف مذہبی اسکا لرز نے سراہا بلکہ ہر مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے اس اقدام کو خوش آئند قرار دیا۔

اسلام امن کا دین ہے جس کا بنیادی مقصد بنی نوع انسان کو فلاح کے راستہ س پر چلنے کا پیغام دینا ہے تاکہ اس کامل دین پر عمل کر کے ہم اپنی دنیا اور آخرت کو سنوار سکیں مگر آج مغربی دنیا میں ہمارے اس پیام امن کو جس طرح سے ایک غلط تاثر دینے کی کوشش کی جا رہی ہے ،وقت آ گیا ہے کہ بحثیت مسلمان اسلامو فوبیا کے خلاف مل کر جدو جہد کا آغاز کریں۔

سورس : وی این ایس ، اسلام آباد