اسلام آباد15اپریل  (اے پی پی): اسلام آباد  کی مارکیٹس میں کرونا وائرس کہ پیش نظر  لاک ڈاؤن میں نرمی کہ ساتھ ہی  کاروباری سرگرمیوں کا محدود سطح پر آغاز دیکھنے میں آ رہا ہے۔

تفصیلات کہ مطابق وزیراعظم عمران خان نے کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے 14اپریل کہ بعد سے جزوی لاک ڈاؤن میں نرمی کے ساتھ 2 ہفتے توسیع کی اور درج ذیل شعبہ جات سے منسلک افراد و محنت کشوںکو  مشروط طورپر کھولنے کی اجازت دی ۔ان شعبہ جات میں   ‘تعمیراتی صنعت ، زرعی مشینری مکینک، الیکٹریشن  مکینک ،ٹایلز شاپس ڈرائی کلینیر ،سینڑری شاپس، ٹیلرز ، کریانہ  اسٹورز،

کیمیکلزانڈسٹری، آئی ٹی کمپنیاں ،ویٹرنری سروسز،رنگ ساز، پینٹرز، الیکٹرک سٹورز ،بیکرز، پھل سبزی فروش اور دودھ دہی کی دکانیں سر فہرست ہیں۔ شاپنگ مالز‘مارکیٹس‘سینماگھر ‘ اسپورٹس ‘اسکول کالجز ، عوامی مقامات پر اگلے دو ہفتے لاک ڈاؤن برقرار رہے گا۔

اسی طرح اسلام آباد میں اسٹیشنری،شیشہ سازی کے یونٹس، پیپر اینڈ پیکیجنگ اور پودوں کی نرسریاں پابندی سے مستثنیٰ ہوں گی۔

اسلام آباد کی آبپارہ مارکیٹ میں جب چند تاجر حضرات سے بات چیت کی گئی تو انھوں نے بتایا کہ  آج صبح سے دکانیں کھولیں تو  ہیں مگر متعلقہ ایس ایچ او نے شٹر ڈاؤن کروا دیا ۔جسکی ایک بڑی وجہ ابھی تک حکومتی نوٹیفکیشن کا جاری نہ ہونا ہے۔تاہم کچھ دکانداروں نے اپنے رسک پر دکانیں کھلی رکھنے کا تہیہ کیا ہے ۔دکانداروں کا  کہنا ہے کہ لاک ڈاؤن کہ باعث کاروبار کی بندش سے  پہلے ہی بہت نقصان اٹھایا ہے۔ کاروباری طبقے نے  حکومت کی طرف سے لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد کاروبار کی اجازت ملنے کو سراہا۔

اسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ کے مطابق اسلام آباد میں آرکیٹیکٹس اور انجینئرز کی سروسز لینے کا، سڑکوں کی تعمیرات پر کام شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جبکہ مارکیٹ، شاپنگ مال، پبلک ٹرانسپورٹ پر پابندی برقرار رہے گی۔

اے پی پی /سحر/ریحانہ