I- 11/4اسلام آباد،یکم اپریل(اے پی پی ):اسلام آباد

فروٹ اور سبزی منڈی میں  مارکیٹ انتظامیہ کی نااہلی کی وجہ سے جگہ جگہ گندگی کے ڈھیر لگے ہوئے ہیں اور کرونا وائرس کی موجودہ سنگین صورتحال کے پیش نظر صفائی ستھرائی کے خصوصی اقدامات کیئے جانا انتہائی  ضروری تھا بلکہ مسلسل ہونے والی باروشوں کے بعد تو سبزی منڈی کی صورتحال اور بھی مخدوش نظر آ رہی ہے ۔

 مارکیٹ کمیٹی کے عملے کی نااہلی کی وجہ سے جگہ جگہ گندگی اور کیچڑ کے ڈھیر لگ گئے ہیں۔ سڑکوں پر گندہ پانی اور کوڑا کرکٹ واضح نظر آ رہا ہے جبکہ اس وقت ڈینگی کہ لاروا کی افزائش کا بھی سیزن ہےاورڈینگی کی وبا پھیلنے کا بھی خطرہ ہے۔

 یہ سب ایسے وقت میں دیکھنے میں آ رہا ہے جب دارلحکومت کی تمام ریاستی مشینری کرونا وائرس سے بچاؤ کہ لئیے حفاظتی اقدامات کی تگ و دو میں مصروف عمل ہے،یہ تمام صورتحال شہریوں کہ لئے  انتہائی تکلیف دہ اور خطرناک ہے ،چیف کمشنر کو اس صورتحال کا فوری نوٹس لینا چاہیے ۔منڈی کے اندرونی حصوں میں ٹریفک کی روانی میں  بھی مسائل کا سامنا  ہے جبکہ ٹرکوں سے سبزیوں اور پھلوں کو اتارتے وقت اور رات کے اندھیرے میں منڈی کی سکیورٹی بھی ایک سوال ہے۔

سبزی و فروٹ منڈی کے گاہکوں، مزدوروں اور سٹال ہولڈروں کا کہنا ہے کہ اس وقت سبزی منڈی میں گندگی،بازار میں لائٹس کا نہ ہونا،ناقص سیوریج سسٹم ، سکیورٹی کے ناکافی انتظامات بڑے مسائل ہیں۔تمام دن منڈی میں سبزیاں اور پھل گندگی میں پڑے رہتے ہیں اور صفائی کے ناقص انتظامات کی وجہ سے پھل اور سبزی فروش پریشان حال ہیں ،یہاں تک کہ منڈی کہ بیچوں بیچ گرین بیلٹ جو کہ شاید اسکی حوبصورتی میں نکھار کہ لیے بنائی گئی تھی اس کے اندر بھی جا بجا گلی سڑی سبزیاں ہی پڑی ہوئی ہیں اور کوڑے کہ ڈھیر نظر آتے ہیں ۔

پوری منڈی میں کہیں بھی سی ڈی اے انتظامیہ کی طرف سے لائٹ کا بندوبست نہیں ہے اور سرشام ہی تاریکی بڑھنے تک سٹال ہولڈرز اور دکاندار حضرات اپنے طور پر روشنی کا بندوبست کرنے لگتے ہیں مگر ان حالات میں امن وامان کی صورتحال بھی توجہ کی مستحق ہے۔

اے پی پی /سحر/حامد