اسلام آباد، 28اکتوبر(اے پی پی ):پاکستان میں بریسٹ کینسر کا مہلک مرض تیزی سے  بڑھ رہا ہے۔ اس کی تشخیص  پہلے مرحلے میں چار فیصد سے بھی کم ہے جبکہ ہر نو میں ایک خاتون کو بریسٹ کینسر کا خطرہ ہے۔ فکر انگیز بات یہ ہے کہ ترقی پذیر اور پسماندہ ممالک کے ساتھ ساتھ ترقی  یافتہ ممالک کی خواتین بھی اس مرض کا شکار ہو رہی ہیں۔ یہ بیماری موروثی ہے۔ اس کے چار مراحل ہیں۔

ضرورت اس امر کی ہے کہ اس مسئلہ کی آ گاہی کو ہر سطح پر اجاگر کیا جائے اور تشخیص  اور علاج کو بھی غریب کی پہنچ میں لایا جائے۔

بریسٹ کینسر کے بارے میں مزید جانیں اس رپورٹ میں۔۔۔۔

وی این ایس، اسلام آباد