کوئٹہ،16(اے پی پی ): بلوچستان میں چار روز کے دوران بارش ، برفباری  اور گیس سے دم گھٹنے کے باعث پچیس افراد جاں بحق اورڈپٹی کمشنر مستونگ سمیت  بتیس افراد  زخمی ہوگئے –

بلوچستان میں  شدید  برفباری نے گزشتہ تین دہائیوں کا ریکارڈ توڑ دیا ۔کوئٹہ ، ژوب ، پشین ،چمن ، قلعہ سیف اللہ ، شیرانی ، خضدار ، مسلم باغ  اور کان مہترزئی  میں ٹریفک حادثات ۔۔  کچے مکانات گرنے  اور مکان میں گیس بھرنے  سے  پچیس افراد زندگی کی بازی ہار گئے ۔۔

کوئٹہ ژوب  شاہراہ پر برفباری کے باعث درجنوں گاڑیاں اور بسیں اب بھی پھنسی ہوئی ہیں ، جس  کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔

ترجمان بلوچستان حکومت لیاقت شاہوانی کا کہنا ہیں کہ برفباری سے بند شاہراوں کو کھولنے اور پھنسے ہوئے افراد کو ریسکیو کرنے کا عمل جاری ہے اور بلوچستان حکومت نے امدادی سرگرمیوں کا آغاز کردیا ہیں ۔

برفباری کے بعد کوئٹہ سمیت شمالی بلوچستان کے بیشتر اضلاع شدید سردی کی لپیٹ میں ہیں ،  محکمہ موسمیات کے مطابق زیارت میں منفی چودہ ، قلات میں منفی تیرہ اور کوئٹہ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی گیارہ ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔۔

وی این ایس  کوئٹہ