جامشورو، 29 فروری(اے پی پی ):سینٹر آف ایکسیلنس ان آرٹ اینڈ ڈزائن جامع مہران جامشورو میں تین روزہ تیسرا عالمی واٹر کلر میلا امن، پیار اور بھائی چارے کے پیغام کے ساتھ اختتام پذیر ہو گیا، انٹرنیشنل واٹر کلر سوسائٹی اور فیبریانین اکواریلو اٹلی کے تعاون سے منعقدہ کانفرنس کے آخری دن پر تمام غیر ملکی و ملکی آرٹسٹوں نے مل کر 25 میٹر لمبی پینٹنگ ڈیزائن کرکے نئی تاریخ رقم کی۔ منفرد پینٹنگ ڈیمو دیکھنے کے لیے وائس چانسلر  جامع مہران پروفيسر اسلم عقيلي،  نامور آرکیٹیکٹ حمیر سومرو، حیدرآباد چیمبر آف کامرس کے صدر سیٹھ گوہراللہ برکت، مختلف اسکول اور کالجز کے طلبہ و طالبات اور مختلف مکتبہ فکر کے لوگوں نے شرکت کی اور آرٹسٹوں کے کام کی تعریف کی۔

غیر ملکی و ملکی آرٹسٹ کا  سینٹر آف ایکسیلنس ان آرٹ اینڈ ڈزائن پہنچے  پر  اجرک، لنگی اور ثقافتی دھنوں سے استقبال کیا گیا، تاریخی پینٹنگ بنانے میں کینیڈا کے عطانور ڈوگن، اسومان ڈوگن، برازیل کی ایوانی رینری، سلویکیا کی نتالیہ اسٹوڈن کوفا، روس کی الینا کروگوفا، امریکہ کی ڈیانا ٹوما، لیسٹر ملر، بوب حنا، ارجنٹائن کے ایزابیل مورینو، ولادمير مارکس، گنیستا لوریسیا اور پاکستان کے مختلف صوبوں کے آرٹسٹوں نے مشترکہ طور پر حصہ لیا، سب آرٹسٹوں نے مل کر پاکستان کے تاریخی مقامات، قدرتی مناظر اور فطری حسن کو پینٹ کیا۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے غیر ملکی آرٹسٹوں نے کہا کہ پاکستان پیار، محبت اور امن کی دھرتی ہے اگر ایسے پروگرام ہوتے رہے تو وہ بار بار پاکستان آنا چاہینگے۔سینٹر آف ایکسیلنس ان آرٹ اینڈ ڈیزائن کے ڈائریکٹر ڈاکٹر بھائی خان  نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جو آرٹسٹ دوسرے ممالک سے یہاں پیار اور محبت کا پیغام لیکر آئے وہ پاکستان سے مہمان نوازی اور بھائی چارے کا تحفہ ساتھ لیکر جا رہے ہیں۔

میلہ میں  سینٹر آف ایکسیلنس ان آرٹ اینڈ ڈزائن کے طلبہ و طالبات نے ملک کے تمام صوبوں کا ثقافتی رقص پیش کیا جس میں غیر ملکی آرٹسٹ بھی گھل مل گئے۔ اس موقع پر طلبا کی جانب سے پتنگ بازی بھی کی گئی اور انہوں نے باہر سے آئے ہوئے آرٹسٹوں کو پتنگ اڑانے کے طریقے بھی سکھائے۔

 پروگرام کے آخر میں مشعل برداری کی تقریب ہوئی جس میں تمام آرٹسٹوں نے سورج ڈھلنے کے بعد غبارے آسمان میں چھوڑے اور امن زندہ باد، پاکستان زندہ باد کے نعروں کی گونج سے کانفرنس کا اختتام کیا۔

وی  این ایس،  حیدرآباد