اسلام آباد، 03 دسمبر(اے پی پی ):خصوصی طور پر اہل افراد بے پناہ صلاحیتوں کے مالک ہوتے ہیں اور اگر ان کو سازگار ماحول فراہم کیا جائے تو وہ ملک کی تعیر و ترقی میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔

 خصوصی افراد کے مسائل کواُجاگر کرنے  ،  ان کی ترقی اور   بہتری کی راہ میں  حائل  تمام رکاوٹو ں کے خاتمے اور  انہیں   معاشرے کا   ایک کارآمد شہری بنانےکے لیے ہر سال     تین دسمبر خصوصی افراد کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے ۔

موجودہ حکومت خصوصی لوگوں کی فلاح و بہبود ، تعلیم اور تربیت اور انہیں زندگی کی بنیادی ضروریات  کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کررہی ہے۔  اس مقصد کے لیے حکومت نے مختلف سماجی پروگراموں کا آغاز کیا ہے جن میں “احساس پروگرام” بھی شامل ہے ، جس کے تحت معاشرے کے دوسرے پسے طبقوں کے ساتھ ساتھ خصوصی افراد کی فلاح و بہبود کےلیے اقدامات اُٹھائے جا رہے ہیں۔ اس کے علاوہ ان   خصوصی  افراد  کے حقوق کے تحفظ اور فلاح و بہبود کو یقینی بنانے کے لیےمتعدد قوانین  بھی زیرغور ہیں۔

بحیثیت معاشرہ ہماری    ذمہ داری ہے کہ   ان خصوصی افراد  کو اُن کی جسمانی معذوری کی وجہ سے نظرانداز  کرنے کے بجائے  ان کی صلاحیتوں کو نکھارکراُنہیں معاشرے کے لئے مفید شہری بنانے میں اپنا  مثبت کردار ادا کریں ۔

خصوصی افراد   بھی معاشرے میں   یکساں  عزت واحترام کےمستحق ہیں اور ہماری تھوڑی سی توجہ ان کی زندگی میں بہت سی خوشیاں لاسکتی ہے۔

وی  این ایس، اسلام آباد

Download Video