اسلام آباد، 27اکتوبر(اے پی پی ):27اکتوبر کا دن  مقبوضہ کشمیر ، آزاد کشمیر اور دنیا بھر میں  کشمیری یوم سیاہ کے طور پر مناتے ہیں ۔ یہ وہ سیاہ دن ہے  جب 27 اکتوبر 1947 کو  بھارتی  فوج نے سری نگر  پر اتارتے ہی کشمیریوں پر مظالم ، قتل عام  اور جبری قبضہ کا آغاز کیا تھا یہ سلسلہ آج تک جاری ہے ۔

یوں  تو  کشمیر میں راتوں کی  تاریخی  اور ظلمتوں  کے اندھیرے ، دن کے  اجالے میں بھی جاری  وساری ہیں مگر کشمیر پر  بھارتی فوج  کے جبری قبضہ کو  کشمیریوں  نے نا کھبی  تسلیم کیا اور نا کریں گے، یہی وجہ  ہے  کہ 27 اکتوبر کو کنٹرول  لائن کے دونوں جانب  اور دنیا بھر  میں  مقیم کشمیری   اپنا احتجاج ریکارڈ کراوتے  ہیں ۔

بھارت نے  اقوام متحدہ کے  فیصلہ کو پس پشت ڈال کر ہٹ دھرمی  کا راستہ اختیار کر رکھا  ہے  اور کشمیر کے اس بڑے حصہ پر قابض   ہے جسے دنیا مقبوضہ کشمیر کے نام سے جانتی ہے۔بھارت اس مسئلہ میں اتنا الجھ  چکا ہے کہ ہر قسم کے ہتھکنڈوں  کے باوجود اسے کوئی راستہ نہیں مل رہا یہاں تک کہ اب ریاستی  دہشت گردی  بھی حالات کو قابو میں نہیں لاسکتی ۔

آج  کے دن کشمیری دنیا  کی مہذب اقوام کی طرف  سوالیہ نظروں سے دیکھتے ہیں  اور مطالبہ کرتے  ہیں  کہ مقبوضہ کشمیر میں قابض  بھارتی  فوج کے  ہاتھوں  انسانی حقوق کی سنگین  پامالیاں  بند  کرائیں اور  مقبوضہ کشمیر کی  مظلوم عوام کو  بھارت کے غاصبانہ  قبضہ  سے آزادی دلائیں۔

وی این ایس، اسلام آباد

Download video