اسلام آباد ، 30 اکتوبر(اے پی پی ): زرعی شعبہ نہ صرف غذائی تحفظ کو یقینی بنانے میں کلیدی کردار کا حامل ہے بلکہ اس سے روزگار کی فراہمی کے ساتھ ساتھ صنعتوں کیلئے خام مال کی فراہمی بھی ہو تی  ہے۔ ایک زرعی  معیشت  ہونے کی حثیت سے   پاکستان کی   اقتصادی ترقی میں  زراعت کا  شعبہ  انتہائی   اہمیت کا  حامل  ہے اسی لیے موجودہ حکومت وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں  اس شعبہ کی ترقی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے ۔

موجودہ حکومت نے  رواں مالی سال کے دوران زرعی شعبہ کیلئے  1.35 کھرب روپے قرضوں کی فراہمی کا ہدف مقرر کیا ہے جبکہ گزشتہ مالی سال کیلئے شعبہ کو قرضہ جات کی فراہمی کا ہدف 1.17 کھرب روپے مقرر کیا گیا تھا۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعدادوشمار کے مطابق رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران زرعی شعبہ کو 263 ارب روپے کے قرضے جاری کئے جا چکے ہیں  ۔

زرعی شعبہ کی ترقی  وقت کی ایک اہم ضرورت ہے     جس   کیلئے جامع حکمت عملی کے تحت پالیسی سازی کی بھی ضرورت ہے ۔ اس کے علاوہ     زیادہ پیداوار کے حامل بیجوں اور جدید آلات و ٹیکنالوجی سے استفادہ سے مطلوبہ اہداف کے حصول کو یقینی بنا کر معاشی  ترقی اور   استحکام کی  راہیں ہموار کی

 جا سکتی ہیں  ۔

ان قرضوں کی فراہمی سے  جہاں  زراعت  کی ترقی میں مدد ملے گی  وہیں   کسان اور    اس شعبہ سے منسلک   افراد کی ترقی اور   خوشحالی کے نئے   دور کا بھی آغاز ہو گا۔

وی این ایس ، اسلام آباد

Download video