اسلام آباد ، 09اکتوبر (اے پی پی): یوں تو اسلام آباد قدیم شہر نہیں لیکن مارگلہ ہلز کے ساتھ بسے اس شہر میں بہت سی تاریخی اہمیت کی حامل جگہیں موجود ہیں،سید پور ویلج بھی ان میں سے ایک ہے۔

مارگلہ پہاڑیوں کے دامن میں واقع یہ گاؤں کئی حوالوں سے انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔یہاں تاریخی عمارتیں ماضی کی یاد تازہ کرتی ہیں،یہاں صاف شفاف پانی کے چشمے بہتے ہیں۔اسلام آباد انتظامیہ نے اسے ایک ماڈل ویلج قرار دیا۔

اب یہاں مختلف ریسٹورنٹس بنائے گئے ہیں۔مارگلہ کے پہلو میں آباد اس گاؤں میں  مقامی لوگوں کے علاوہ باہر سے کئی لوگ بھی آکر  آباد ہوئے  ہیں۔ایک روایت کے مطابق یہ تقریبا پانچ سو سال پرانا گاؤں ہے ۔

سید پور گاؤں کی قدیم طرز اور پتھروں سے بنی عمارتوں، مندر، مسجد اور دھرم شالا سے یہاں مختلف تہذیبوں کے دھندلے نقوش ظاہر ہوتے ہیں، اب تو سرکاری سطح پر بھی  سید پور کو  ثقافتی ورثہ قرار دیا گیا ہے۔ پرانی عمارتوں کو مرمت کے بعد اصلی حالت میں برقرار رکھا گیا۔

کسی زمانے میں اسکو کمہاروں کی بستی کہا جاتا تھا۔ سید پور گاؤں کی دوبارہ تزین و آرائش کا کام 2006 کو سی ڈی اے کی زیر نگرانی ہوا۔اسے سیاحوں کی توجہ کا مرکز بنانے کا فیصلہ کیا گیاجس کی تکمیل میں  دو سال لگے۔ یہ ایک ایسا گاؤں ہے جو قدرتی حسن کے ساتھ ساتھ تاریخی اہمیت کا بھی حامل ہے اور اسے انتظامیہ نے جدید رنگ دے کر سیاحوں کے لئے اور بھی پرکشش بنا دیا ہے۔

وی این ایس، اسلام آباد