اسلام آباد ، 20ستمبر ( اے پی پی ):یوم یکجہتی کشمیر  کے موقع  پر وزیر اعظم عمران خان نے اپنے خطاب میں پوری پاکستانی قوم سے کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کے لئے باہر نکلنے کو کہا تھا ۔ وزیر اعظم نے کہا تھا کہ ہمیں مشکل کی اس گھڑی میں اپنے کشمیری بھائیٍٍ بہنوں کو یہ باور کروانا ہے کہ ہم ان کے ساتھ ہیں۔

اسی سلسلے میں اسلام آباد کے ایف سکس ٹو گرلز اسکول /  کالج میں آج کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے ریلی نکالی گئی۔جس میں اسکول کی طلبا ءنے باہر نکل کر کشمیریوں کو یہ باور کروایا کہ مشکل کی کسی بھی گھڑی میں وہ اپنے آپ کو اکیلا نہ سمجھیں، پاکستان کی بچیاں ہو یا اساتذہ یا پارلیمنٹیرینز سب ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

پارلیمانی سیکرٹری  برائے امور تعلیم  وجیہہ اکرام نے  بچیوں کے ساتھ ریلی میں شرکت کرتے ہوئے ان کی آواز کے ساتھ آواز ملا کر بھارت کو کشمیر سے نکل جانے اور قدم بڑھاؤ پاک فوج ہم تمھارے ساتھ ہیں کہ نعرے لگائے۔

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے  پارلیمانی سیکرٹری نے کہا کہ  اگر کشمیر پر کسی قسم کی  بھی مہم جوئی کی کوشش ہوئی تو پورا خطہ متاثر ہو گا،انہوں نے کہا ہم جنگ نہیں  چاہتے لیکن اگر ہم پر جنگ مسلط کی گئی تو اس کا بھرپور جواب دیا جائے گا  کیونکہ پاک فوج دنیا کی بہترین اور مضبوط فوج ہے جو کسی بھی قسم کی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کے لئے تیار ہے،یہ پوری دنیا کے لئے ٹیسٹ کیس ہے ۔ پورے بائیس کروڑ عوام کشمیریوں کی پشت پر کھڑے ہیں۔

ممبر قومی اسمبلی ساجدہ بیگم نے اس موقع پر بات کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم نے اپنے آپ کو کشمیری عوام کا سفیر کہا ہے اور وہ کشمیریوں کا مقدمہ لڑنے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں جا رہے ہیں۔

ریلی میں طلباءنے ہم آواز ہو کر کشمیر بنے گا پاکستان اور ہم لے کر رہیں گے آزادی کے نعرے لگائے۔ان  کا کہنا تھا کہ ہم اپنے کشمیری بھائی بہنوں اور ماؤں کے لئے آزادی لینے نکلے ہیں۔

کشمیری بھائی بہنوں کے لئے پاکستان کا بچہ بچہ اپنی جان ہتھیلی پر  رکھ کر باہر نکل آیا ہے، آج کی یہ ریلی کشمیریوں کے لئے واضح  پیغام ہے کہ ہم سب ان کے ساتھ ہیں اور بھارت کے لئے لمحہ فکریہ ہے کہ وہ یہ جان لے کہ  پاکستان کا ہر بچہ نوجوان اور بوڑھا  کشمیریوں کے لئے حاضر ہے۔

وی این ایس ، اسلام آباد