اسلام آباد،  مارچ   31 (اے پی پی ): پاکستان کی عوام دنیا بھر میں عطیات کے حوالے سے اپنی فراخ دلی کی وجہ سے  جانے جاتے ہیں     اس وقت  بھی  جب  کورونا کے باعث  پیدا ہونے والے حالات نے  محنت  کش  او ر دیہاڑی   دار  طبقے کے  لیے  بہت سی مشکلات   پیدا  کر دی ہیں   ایسے میں   مخیر اور  دردمند لوگوں کی ایک بڑی تعداد ان  لوگوں    کی امداد کے لیے  سامنے آئی اور   یہ   لوگ   کھانے  پینے کے سامان،  نقد  رقوم،  ماسک اور ہینڈ سینٹارٓئزرز    ان مستحق لوگوں تک پہنچا رہے  ہیں  ۔

ان کا  یہ جذبہ  بحثییت  قوم  اس مشکل  وقت میں ایک انتہائی  قابل تحسین عمل ہے   لیکن   ایسی کسی بھی تقسیم کے دوران لوگ   کسی بھی احتیاطی  تدبیر کو   نظر انداز کرتے ہوئے   جھپٹا  جھپٹی     کرتے نظر آ تے ہیں     اور کورونا کو روکنے کے واحد  عمل سوشل  ڈسٹنسنگ   کو مکمل نظر انداز کر رہے ہیں  جس   نے اس پورے عمل کی افادیت کو  ختم ہی   نہیں کیا بلکہ    یہ  اس وبا کے  بڑے پیمانے    پر  پھیلاؤ  کا   باعث  بن سکتا ہے ۔

اس وقت مستحق  افراد کی مدد  ہمارا فرض  بھی ہے   لیکن اس عمل کے لیے   کسی مربوط  نظام   اور لوگوں میں زیادہ سے زیادہ آگاہی پید اکرنے کی بھی ضرورت ہے تا کہ ہم اس وبا کو شکست دینے میں کامیاب ہو سکیں  ۔

اے پی پی    /   سعیدہ \ ریحانہ