اسلام آباد ، 08 اگست (اے پی پی ): پاکستان میں پارلیمان کے ایوان زیریں یعنی قومی اسمبلی کے مرکزی ہال میں 40فٹ چوڑا قومی پرچم آویزاں کردیا گیاہے۔  60ہزار غباروں پر مشتمل یہ پرچم قومی اسمبلی میں  یوم آزادی کے مناسبت سے سے آویزاں کیا گیاہے۔ یہ دنیا کی پارلیمانی تاریخ میں پہلا موقع ہوگا کہ اسمبلی کے اندردنیا کا سب سے بڑا قومی پرچم نصب کیا گیا ہے۔

چالیس فٹ اونچائی اور ساٹھ فٹ لمبائی کا حامل دنیا کا سب سے بڑا غباروں سے تیار کردہ قومی پرچم قومی اسمبلی ہال میں تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے اقلیتی ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر رمیش کمار ونکوانی نے ہندوبرادری کی طرف سے تحفہ دیا ہے۔

ڈاکٹر رمیش کمار کا کہنا تھا پاکستان ایک پر امن عوامی جدو جہد کے نتیجے میں معرض وجود میں آیا تھا اور پاک سرزمین پر بسنے والے لا تعداد ہندو باشندوں نے آزادی کے وقت قائد اعظم محمد علی جناح کی بات مانتے ہوئے پاکستان کو اپنی دھرتی ماتا بنایا۔

ایک اندازے کے مطابق  اس خصوصی قومی پرچم پر بیس لاکھ روپے کے اخراجات آئے ہیں جوسندھ سے ہندو رکن قومی اسمبلی رمیش کمار نے  ہندو کونسل کی طرف سے ادا کیے ہیں مگر جب یہ سوال ڈکٹر رمیش سے کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ پاکستانی جھنڈا دنیا میں سب سے انمول اور بلند جھنڈا ہے اس کی کوئی قیمت ادا نہیں کی جا سکتی۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ اس منفرد قومی پرچم کو آج یہ اعزاز بھی حاصل ہو چکا کہ اسے گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل کر لیا گیا ہے۔

اے پی پی/صائمہ/قرۃالعین