اسلام آباد،  03اکتوبر(اے پی پی ): وزیر اعظم عمران خان  نے کہا  ہے کہ مسلمان تلوار کی وجہ سے نہیں بلکہ علم کی وجہ سے آگے آئے۔ انگریز کے تعلیمی نظام نے طبقاتی نظام کو جنم دیا۔ انہوں نے کہا ایک قوم بننے کے لئے ایک نصاب  کا ہونا ناگزیر ہے۔

وزیر اعظم نے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی یکساں نظام تعلیم متعارف کرانے کی مخلصانہ اور ان تھک کوششوں کو سراہا اور انہیں اقبالیات کو سکولوں کی سطح پر متعارف کرانے کی ہدایت کی۔

ماہر تعلیم ڈاکٹر عبیداللہ  نے اے پی پی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بدقسمتی سے ملک میں تین قسم کے  نظام تعلیم رائج تھے جس سے طبقاتی خلیج بڑھتی گئی اور تقسیم و نا انصافی معاشرے میں فروغ پاتے گئے۔ پہلی مرتبہ سرکاری اسکولز،  نجی ادارے اور دینی مدارس کے طلبہ کو یکساں مواقع میسر آئیں گے جس سے طبقاتی امتیاز کو ختم ہونے میں مدد ملے گی۔

 ان کا مزید کہنا تھا کہ تعلیم کا مقصد روزگار ہی نہیں بلکہ ایک اچھا انسان بنانا بھی ہے اور حکومت کو چاہیے کہ تعلیمی پالیسی پر عمل کرانے کے ساتھ ساتھ پیشہ ورکی ٹیم ہونی چائیے جو صیح سمت میں لے جاسکے گی ۔

سکولوں کی سطح پہ اقبالیات کو متعارف کروانے کی ہدایت کے حوالے سے ڈاکٹر عبیداللہ کا کہنا تھا کہ اقبال ایک سوچ اور فلسفے کا نام ہے ۔

سورس: وی این ایس، اسلام آباد