اسلام آباد، 26 جولائی (اے پی پی ):حکومت پاکستان کی جانب سے ملکی تاریخ کا سب سے بڑا تعمیراتی ریلیف پیکج دیا  گیا ہے۔ وزیر اعظم عمران خان کے ویژن کے عین مطابق، ریلیف پیکج کا مقصد معیشت کی بحالی اور مزدور طبقے کو روزگار کے موقع فراہم کرنا ہے۔ حالیہ کورونا وائرس وبا کے باعث مزدور، دیہاڑی   دار طبقہ معاشی لحاظ سے شدید متاثر ہوا ہے۔ یہی وجہ ہے حکومت نے تعمیراتی شعبے کو صنعت کا درجہ دینے کا اعلان کیااور ساتھ ہی اس صنعت کے فروغ  کیلئے  ایک “تعمیراتی صنعت ترقیاتی بورڈ” کا قیام عمل میں لایا گیا ہے ۔

تعمیراتی صنعت  ریلیف پیکج کے تحت تعمیراتی سامان اور خدمات پر ودہولڈنگ ٹیکس معاف کردیا گیا ہے۔ مزید برآں نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی کے تحت 90 فیصد فکسڈ ٹیکس کی چھوٹ دی گئی ہے۔ صرف یہی نہیں بلکہ بینکوں کی جانب سے 330 ارب روپے تعمیراتی شعبے کیلئے مختص  کئے  گئے  ہیں جبکہ  غیر منقولہ جائیداد پر پانچ فیصد ٹیکس میں بھی  کمی کردی گئی ہے۔

نیا پاکستان ہاؤسنگ سکیم  ملکی تاریخ کا سب سے بڑا تعمیراتی منصوبہ ہے۔ وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ اس منصوبے سے عوام کے اپنے گھر کا خواب پورا ہوسکے گا جبکہ تعمیراتی شعبے کو مختلف مراعات سے سہولتیں دی گئی ہیں تاکہ معیشت کا پہیہ تیز گھومے اور روزگارکے موقع پیدا ہوں۔

وی این ایس اے پی پی