اسلام  آباد ، 20 جو لائی (اے پی پی ): وزیر اعظم عمران خان دورہ  امریکہ کے دوران امریکہ  میں مقیم پاکستانیوں سے ایک نئے انداز میں ملیں گے ۔ ماضی میں پاکستانی وزیراعظم جب امریکہ کا سرکاری دورہ کرتے ہیں تو صرف پاکستانی بزنس کمیونٹی کے ساتھ ان کی ملاقات  ہوتی تھی  جس میں بزنس کمیونٹی اور با اثر شخصیات کو مدعو کیا جاتا تھا  اور ایسی تقریبات کے اخراجات بھی حکومت پاکستان ہی اٹھاتی تھی  مگر اس بار   وزیر اعظم عمران خان دورہ  امریکہ  کے  دوران دارالحکومت واشنگٹن میں ہزاروں پاکستانیوں سے خطاب کر کے ایک نئی روایت قائم  کریں  گے اور اتوار  اکیس جولائی کو پاکستان کے کسی بھی وزیر اعظم کے لیے یہ پہلا موقع ہو گا کہ وہ امریکہ میں مقیم ہزاروں پاکستانیوں سے مخاطب ہوں۔

اس کے لیے  واشنگٹن کے معروف اسٹیڈیم کیپیٹل ون ایرینا کا انتخاب کیا گیا ہے،  جس کی گنجائش بیس ہزار افراد کی ہے اور انیس ہزار   نشستیں ریزرو بھی کی جاچکی ہیں۔

یہاں یہ دلچسپ بات بھی قابل ذکر ہے کہ کیپیٹل ون ایرینا میں کئی بین الاقوامی شخصیات عوامی اجتماعات منعقد کر چُکی ہیں جن میں مشال اوباما اور دلائی لاما بھی شامل ہیں  بلکہ متعدد بین الاقوامی شہرت یافتہ فنکاروں اور گلوکاروں نے بھی یہاں اپنے اپنے فن کا مظاہرہ کیا۔ دنیائے باکسنگ کے معروف باکسر مائیک ٹائسن عبد العزیز نے  بھی اپنا آخری میچ اسی اسٹیڈیم میں کھیلا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا  ہے  کہ امریکہ میں مقیم ہزاروں پاکستانی اپنے وزیر اعظم کو براہ راست سنا چاہتے ہیں   جس کے  لیے انکا جوش و خروش دیدنی ہے۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ وزیر اعظم کفایت شعاری کے پیش نظر کمرشل فلائٹ سے امریکہ پہنچے ہیں، یہی وجہ ہے کہ کیپیٹل ون میں ہونے والی تقریب کے اخراجات بھی حکومت پاکستان نہیں بلکہ امریکہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی ہی ادا کر رہی ہے۔

اے پی پی/ حمزہ رحمٰن/قرۃالعین