اسلام آباد ، 24جولائی(اے پی پی ):وزیر اعظم  عمران خا ن  کامیاب دورہ امریکہ کے بعد وطن واپس  روانہ ہو گئے ہیں، بحثیت وزیر اعظم  ، عمران خان کا یہ امریکہ کا پہلا دورہ تھا ، واشنگٹن پہنچنے  پر امریکی پروٹوکول انتظامیہ کے سینئر  حکام نے وزیر اعظم  کا استقبال کیا جبکہ پاکستان ہاوس آمد پر پاکستانی کمیونٹی  نے وزیراعظم کا والہانہ استقبال کیا، واشنگٹن قیام کے دوران وزیر اعظم سے پاکستانی اور امریکن سرمایہ کاروں  نے الگ الگ ملاقاتیں کیں اور پاکستان میں سرمایہ کاری میں دلچسپی کا  اظہار کیا۔ آئی ایم ایف کے ایم ڈی اور  ورلڈ  بینک کے صدر  نے بھی وزیر اعظم  سے ملاقاتیں کیں۔

وزیراعظم  عمران خان  نے  واشنگٹن کے معروف کیپیٹل ون ایرینا سٹیڈیم میں  20ہزار سے زائد پاکستانیوں  کے بڑے اجتماع سے تاریخی خطاب کر کے ایک  نئی روایت ڈالی  ۔

وزیر اعظم عمران  خا ن نے ٹریڈ اینڈ اینوسٹمنٹ کانفرنس سے   بطور مہمان خصوصی خطاب کیا،وزیر اعظم جب صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملنے  وائٹ ہاوس پہنچے  تو امریکی صدر خود ان کے استقبال کے لیے باہر آئے  اور  وزیر اعظم کا شاندار استقبال کیا۔

صدر ٹرمپ کیساتھ ہونے والی مشترکہ پریس کانفرنس میں  وزیراعظم نے اپنی گفتگو اور باڈی لینگوچ سے  پوری دنیا کو خودار ملک کا وزیر اعظم ثابت کیا، اسی لیے صدر ٹرمپ نے پاکستان اور پاکستانی عوام کیلئے شاندار کلمات کہے۔

صدر ٹرمپ نے ملاقات کے دوران وزیر اعظم کی کوششوں کو سراہتے ہوئے   مسئلہ کشمیر میں ثالثی کا کردار ادا کرنے کا عندیہ بھی دیا، وزیر اعظم نے اس موقع پر صدر ٹرمپ کو دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کے کردار، پڑوسیوں سے تعلقات اور معاشی اصلاحات پر  آگاہ کیا۔

امریکن انسٹیٹیوٹ آف پیس  سے  خطاب  میں وزیر اعظم  عمران خان نے  ملکی معاشی استحکام  اور امن کی جانب اٹھائے گئے  اقدامات پر روشنی ڈالی۔

یاد رہے کہ دورہ کے دوران  وفاقی وزرا، آرمی چیف جنر ل قمر جاوید باجوہ اور ڈی  جی آئی ایس پی آر بھی وزیر اعظم  کے ہمراہ تھے، وزیر اعظم عام مسافر کی طرح سفر کرتے ہوئے  امریکہ پہنچے اور عام مسافر کی طرح ہی  نجی پرواز سے واپس وطن آئے۔

وزیر اعظم  عمران خان کا دور امریکہ  بلا شبہ پاکستان  اور امریکہ کے تعلقات کو مضبوطی اور نئی جہتیں  فراہم کرے گا۔

سورس: وی این ایس ،اسلام آباد