راولپنڈی،11جون  (اے پی پی):راولپنڈی چیمبر آف کامرس نے کسٹم ڈیوٹی کی مد میں بیالیس ارب روپے کے ریلیف کا خیرمقدم کرتے ہوئے مالی بجٹ 2021-22کومتوازن اور تاجر دوست قرار دیا ہے ۔

چیمبر کے صدر محمد ناصر مرزا نے وزیر خزانہ شوکت ترین کی بجٹ تقریرکے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بادی النظر میں بجٹ متوازن ہے تاہم تفصیلی موقف بجٹ دستاویزمکمل پڑھنے کے بعد دیا جائے گا۔انہوںنے کہاکہ ٹیکس محصولات کا 5800ارب روپے کا ہدف تب ہی حاصل ہو سکتا ہے جب نئے ٹیکس گزار بنیں گے۔انہوں نے کہاکہ ایف بی آر کی جانب سے ہراسیت کے خاتمے اور آڈٹ کے خاتمے کے لیے تھرڈ پارٹی آڈٹ کی تجویزپر تحفظات ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ کسٹم ڈیوٹی کی مد میں بیالیس ارب روپے کا ریلیف خوش آئند ہے۔آئی ٹی کے ذریعے ٹیکس کولیکشن، آڈٹ سے انسانی مداخلت میں کمی آئے گی۔ سیلز ٹیکس ریٹیلرز کے لیے مراعات اور انعامات جیسے اقدام سے نئے ٹیکس گزار میں اضافہ ہو گا۔ سیلز ٹیکس اور فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی میں اچھے اقدامات اٹھائے گئے ہیں ایس ایم ایز کے لیے ٹرن اوور ٹیکس کی حد تین ملین سے بڑھا کر دس ملین کرنے کے اقدام کی تعریف کرتے ہیں۔ود ہولڈنگ ٹیکس کی شرح سترہ سے بارہ فیصد کرنا خوش آئند ہے۔

گروپ لیڈر سہیل الطاف نے کہا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کے لیے 900ارب رکھے گئے ہیں اس سے معاشی سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا۔ تاہم بجٹ میں جو اعلانات کئے گئے ہیں ان پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔ پالیسیوں کا تسلسل یقینی بنایا جائے۔

 اس موقع پر سابق صدور جلیل احمد ملک، راجہ عامر اقبال، سینئر نائب صدر عثمان اشرف، نائب صدر شاہ ریز ملک، مجلس عاملہ کے اراکین و چیمبر ممبران بھی موجود تھے۔