اسلام آباد،   دسمبر 23 (اے پی پی ):  بچوں کی دماغی اور جسمانی نشوونما میں رکاوٹ بننے والے پیٹ کے کیڑوں کے علاج کے لیے  وزارت  منصوبہ   بندی ترقی و اصلاحات،   وزارت تعلیم اور وزارت صحت کے اشتراک سے  وفاقی دارلحکومت میں دوسری سالانہ   مہم کا آغاز کر دیا  گیا ہے

اس  مہم کے تحت   اسلام آباد کے سرکاری اسکولوں میں پانچ سے پندرہ سال  تک کی  عمر کے    دوہزار تین سو سکولوں  میں   پانچ لاکھ  چوہتر ہزار  سے زائد بچوں کو   مفت  دوا فراہم کی جائے کی ۔

خاتون اول محترمہ  ثمینہ علوی  نے اسلام آباد ماڈل کالج برائے  خواتین میں  بچوں  کو   دوا   دے کر اس مہم کا آغاز کیا  اس موقع پر بات کرتے ہوئے  خاتون اول کا کہنا تھا کہ بچوں کی اچھی صحت ان کی تعلیم اور ذہنی ترقی کے لیے اہم ہے ۔ ان کا کہنا تھا  کہ پائیدار ترقی کے اہداف میں   صحت بنیادی اہمیت کی حامل ہے  اور  ڈی وارمنگ   پروگرام ان مقاصد کے حصول کی جانب  اہم قدم ہے ۔ ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے  وفاقی وزیر تعلیم و پیشہ وارانہ تربیت شفقت محمود نے کہا ہے بچوں کی اچھی صحت ایک   پائیدار اور  ترقی یافتہ معاشرے کے قیام کی جانب پہلا قدم ہے  اور  موجودہ حکومت  نے  بچوں  کی صحت اور انہیں معیاری تعلیم کی فراہمی کو ہمیشہ اولین ترجیح دی ہے ۔

عالمی ادارہ برائے  صحت کے محتاط اندازے کے مطابق دنیا بھر میں  تقریبا ڈیڑھ بلین نفوس   یعنی   دنیا کی آبادی کا ایک چوتھائی حصہ  آنتوں  کے کیڑوں کے مرض میں مبتلا ہے جن میں سے آٹھ سو پینتیس ملین نفوس کو  معالجے  کی ضرورت ہے ۔  صفائی و نکاسی کے ناقص  انتظامات  اور  حفظان صحت کی بدتر   حالت    بیماری کے پھیلاؤ کی اہم وجوہات ہیں۔

وی این ایس، اسلام آباد

Download Video