اسلام آباد، 31 مئی (اے پی پی):پارلیمانی اسمبلی برائے اقتصادی تعاون تنظیم (پیکو) کی دوسری جنرل اسمبلی کانفرنس 31 مئی سے 02 جون تک اسلام آباد میں منعقدہ ہو رہی ہے،  قومی اسمبلی آف پاکستان پیکو کی دوسری جنرل اسمبلی کی کانفرنس کی میزبانی کررہا ہے۔ جس میں افغانستان، ترکی، ازبکستان، تاجکستان، آذربائیجان، قازقستان اور کرغستان کے سپیکرز شرکت کریں گے جبکہ ایران اور ترکمانستان کے اسپیکرز ویڈیو لنک کے زریعے شریک ہوں گے۔

کانفرنس کے افتتاحی اجلاس میں صدر مملکت اسلامی جمہوریہ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی بطور مہمان خصوصی شرکت کریں گے جبکہ افتتاحی اجلاس سے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر  استقبالیہ خطاب کریں گے۔استقبالیہ خطاب کے بعد افغانستان، آذربائیجان، ایران، کرغزستان ، تاجکستان ، ترکی، ازبکستان، قازقستان کے خطاب شامل ہونگے۔

 کانفرنس کا مرکزی موضوع علاقائی اتحاد کے لئے پارلیمانی شراکت کو فروغ دینا ہے۔ کانفرنس میں شریک شرکاء ای سی او کے ممبر ممالک کے مابین بین پارلیمانی تعاون پر غور کریں گے،کانفرنس میں  تجارت، سیاحت اور معاشی تعاون کو فروغ دینے کے راستے تلاش کرنے پر غور و غوض کیا جائے گا۔

 کانفرنس کے پہلے دن یعنی یکم جون 2021 کو بریک آؤٹ سیشن / پینل کی سطح پر کی جائے گی، اس بریک آوٹ سیشن میں علاقائی رابطے کے ایجنڈے کی نمائندگی خواتین اراکین پارلیمنٹ کریں گی اور موسمیاتی تبدیلی   کے موضوع پر شریک ممالک کی خواتین پارلیمنٹیرینز کے کردار کو مزید موثر کرنے پر بحث کی جائے گی جبکہ خطے میں  پائیدار ترقی کے اہداف حاصل کرنے کی راہ میں COVID-19 کے اثرات پر پینل تبادلہ خیال کرے گا۔

کانفرنس کے دوسرے دن 2 جون 2021 کو تجارت اور رابطے کو بڑھانے، راہداری تجارت کو آسان بنانے پر بحث ہو گی۔جس میں باہمی رابطے کو فروغ دینے ، سیاحت کو ترقی اور غربت کے خاتمے کو زیر غور لایا جائے گا۔ ای سی او ریجن میں سیاحت کو فروغ دینے میں پارلیمنٹ کے کردار پر پینل کی سطح پر بحث ہوگی۔

کانفرنس کی اختتامی تقریب بھی 2 جون 2021 کو ہی ہوگی۔ کانفرنس کا اختتام  مہمان خصوصی، مہمان اسپیکرز / وفد کے سربراہان اور اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے اظہار تشکر کے کلمات سے ہو گا۔

واضح رہے کہ بین الاقوامی اہمیت کی حامل یہ کانفرنس اسپیکر اسد قیصر کے خصوصی کوششوں کے نتیجے میں ممکن ہوئی، کانفرنس باہمی امن اور خوشحالی کے ایجنڈے کو مستحکم کرنے کے لئے بین پارلیمانی رابطوں پر مرکوز ہے۔