اسلام آباد ، 18 اکتوبر (اے پی پی ): پانی  جو کہ  نعمت  خداوندی  ہے اس کے بغیر کرہ ارض پر زندگی کا تصور محال ہے   لیکن بڑھتی ہوئی   آبادی   کے باعث جہاں اور بے شمار مسائل نے جنم لیا   وہیں ماحولیاتی آلودگی، سیوریج  ،  زراعت میں  کیڑے مار ادویات  اور  صنعتی  فضلے کے    پانی میں   ڈسچارج کے باعث    پینے ، روز مرہ استعمال  اور    زراعت کے لیے پانی کی فراہمی  ایک    گھمبیر  مسئلہ  بن گیا ۔

صاف اور  صحت مند پانی   کے حصول کے لیے    اب   منرل واٹر کا استعمال  رواج پکڑتا جا رہا ہے لیکن  سوال  یہ اٹھتا  ہے کہ  مہنگی قیمت پر  خریدا   جانے والا

یا زیر زمین  پانی کیا واقعی صاف  اور قابل استعمال ہے  ،  یہ جاننا انتہائی ضروری ہے ۔

پانی  فراہم  کرنے والی تمام   کمپنیوں   اور   فلٹریشن  پلانٹس   کے زریعے مہیا کیے جانے والے پانی کے معیار کو  جانچنے کے لیے وزارت  سائنس  اور ٹیکنالوجی  کے ماتحت  پاکستان کونسل  فار  ریسرچ ان  واٹر  ریسورسز   حکومتی   سطح  پر  پانی  کے نمونے اکھٹے کر کے انہیں چیک کر تی ہے    اور      معیاری پانی فراہم  کرنے والی کمپنیز کی   فہرست  بھی   عوامی معلومات  کے لیے فراہم کرتی ہے ۔ اس کے علاوہ    یہاں  گھریلو سطح پر  پانی  کو چیک کرنے والی ادویات اور       معمولی قیمت پر   لیبارٹری کی سہولیات بھی فراہم  کی جاتی ہیں   جس کے زریعے روزمرہ استعمال کے پانی کی کوالٹی کو چیک کرنا   عام آدمی کے لیے بھی ممکن ہے ۔

پانی زندگی کی بنیادی ضرورت ہے    لیکن غیر معیاری پانی    ایک بہت بڑا خطرہ  ہے    جس سے بچنے کے لیے احتیاطی تدابیر  اختیار کرنا ہماری صحت  مند  زندگی کا ضامن ہے۔

وی این ایس ، اسلام آباد

Video Download