اسلام آباد، 04ستمبر ( اے پی پی): مقبوضہ کشمیر کے مظلوم مسلمان بھارتی استبداد سے نجات پانے کے لیے عالمی برادری بالخصوص مسلم امہ کی طرف نظریں جمائے ہوئے  ہیں۔پاکستان نے ہر  موقع پر کشمیر ی بہن بھائیوں کے لئے آواز بلند کی جس کے نتیجے میں عالمی دنیا کشمیر میں جاری بھارتی مظالم پر چپ نا رہ سکی۔پاکستان کی انتھک سفارتی کاوشوں سے عرب دنیا ،مقبوضہ جموں و کشمیر کے حوالے سے پاکستان کے موقف سے ہم آہنگ ہوتی دکھائی دیتی ہے۔

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی ایک کال پر برادر ممالک سعودی عرب اور عرب امارات کے وزراء خارجہ نے لبیک کہا، اور کشمیر کی صورتحال پر بات کرنے کو پاکستان آگئے۔سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ عادل الجبیر اور عرب امارات کے وزیر خارجہ شیخ عبداللہ بن زائد بن سلطان نے وزیراعظم عمران خان، سول و عسکری قیادت کے ساتھ کشمیر کی حالت پر تبادلہ ء خیال کیا اور پاکستان کا کشمیر پر موقف کو سراہا۔

پاکستانی قیادت نے دونوں وزراء کو واضح کیا کہ بھارت نے 5 اگست کے، یکطرفہ اقدام کے ذریعے کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کر دیا ہے تاکہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں موجود مسلم اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کردیا جائے۔

بھارت کے یہ یکطرفہ اقدامات، نہ صرف بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہیں بلکہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کے بھی منافی ہیں۔سفارتی محاذ پر پاکستان کی جیت کا سلسلہ جاری ہے، اقوام متحدہ کا کشمیر پر اجلاس، یورپی یونین کے اجلاس میں کشمیر کا مسئلہ زیر بحث آنا، اور دنیا بھر کے قائدین کا کشمیر میں جاری بھارتی جارحیت کی خلاف ورزی اور جلد از جلد انسانیت سوز اقدامات کو ختم کرنے پر زور دیا ہے۔

 سورس: وی این ایس، اسلام آباد