اسلام آباد ، 07اپریل (اے پی پی ): پاکستانی  نژادبرطانوی    ڈاکٹر  شازیہ  نے    کورونا    وائرس کے حوالے سے   اپنے ایک  ویڈیو  پیغام  میں  کہا  ہے کہ  کروناوائرس سے پوری دنیا اس وقت متاثر ہے اور ہمیں کورونا وائرس سےمتعلق جاننے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس زکام کی ایک قسم ہےجو کہ بہت خطرناک بھی ہوسکتی ہے،اس کی علامات میں نزلہ، زکام، بخار، کھانسی، جسم میں درد ،گلہ خراب ہونا  شامل ہیں۔

ہمیں کورونا وائرس ہے یا نہیں یہ جاننے  کے بارے  میں   انہوں نے کہا  کہ  اس کے لیے  ایک بنیادی  ٹیسٹ کیا جاتا ہے جس میں مریض کو گہرا سانس لینے کا کہا جاتا ہے  اور ایک سے تیس تک گننے کا کہا جاتا ہے ،اگر مریض آٹھ سیکنڈ سے زیادہ  سانس روک کر گنتی گن لیتا ہے تو اس مریض کو زیادہ سنگین مسئلہ نہیں ہے۔

انہوں نے  کہا کہ عالمی ادارہ صحت کے مطابق کرونا سے ہر چھ میں سے ایک مریض متاثر ہوسکتا ہےلیکن اسی سے نوے فیصد مریض صحت یاب ہوتے ہیں،وہ لوگ جن کو بلڈ پریشر ،دل کے امراض یا شوگی کی بیماری میں مبتلا ہیں ان کو کورونا وائرس زیادہ متاثر کر سکتا ہے۔

کورونا وائرس کے علاج اوراس کی  ویکسین  کے بارے  میں  ڈاکٹر  شازیہ  نے کہا کہ کورونا وائرس کے علاج اور بچاؤ کے لیےکوئی ویکسین دریافت نہیں ہوئی،لیکن اس سے بچاؤ کی بہت ساری تدابیر ہیں جن میں ہاتھوں کو پانی سے بیس سیکنڈ کے لیے  بار بار دھونا اور سینیٹائزر سے ہاتھوں کو صاف  کرنا شامل ہیں   ۔انہوں نے  کہا کہ اگر کھانسی یا چھینک آئے تو ٹشو پیپر کا استعمال کیا جائے یا اپنی کہنی سے  اپنے چہرے کو ڈھانپ لیں   تا کہ اس وائرس کے پھیلاو کو روکا جا سکے ۔

پاکستانی  نژادبرطانوی    ڈاکٹر  شازیہ نے  کہا کہ اس وقت تک  کی تحقیق کے مطابق کورونا وائرس کے باعث اموات کی شرح کم ہے لیکن عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل کے مطابق اموات کی شرح تین اعشاریہ چار فیصد ہے۔

انہوں نے عوام سے اپیل کی  کہ اگر آپ اپنی طبیعت میں کوئی خرابی محسوس کر رہے ہیں تو ڈاکٹر سے رجوع کریں ،اور ان سب احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔

اے پی پی / سعیدہ/حامد