کوئٹہ 20 اپریل (اے پی پی ): سینئر سپریٹنڈنٹ آف پولیس(آپریشن)کوئٹہ طارق الہی مستوئی نے کہا ہے کہ عوامی مقامات پر تعینات پولیس اہلکار خوش اخلاقی کو فروغ دیکر ایسے تمام منفی تاثرات کو ختم کریں جو پولیس کی روایتی بداخلاقی سے متعلق خود ساختہ طور پر قائم ہوچکے ہیں ،ایلیٹ فورس بلوچستان پولیس کا ایک متحرک  اور مستعد دستہ ہے جس میں شامل اعلی تربیت یافتہ جوان بحالی امن کی معمول کی ڈیوٹی کے ساتھ ساتھ اچانک رونما ہونے والے کسی بھی غیر معمولی حالات سے نمٹنے کی پوری صلاحیت رکھتے ہیں ،پبلک مقامات پر تعینات  تمام اہلکاران کسی بھی پوچھ گچھ سے قبل سلام دینے کی روایت قائم کریں۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے کیا، ایس ایس پی آپریشن طارق الہی مستوئی نے کہا ایلیٹ فورس کے جزوی منفی تاثرات کو خوش اخلاقی اور بہتر پیشہ ورانہ کارکردگی سے زائل کرنے کی ضرورت ہے ”پہلے سلام پھر کلام ” کی پالیسی کا نفاذ کردیا گیا ہے ،کسی بھی سنگل اہلکار کے غیر اخلاقی روئیے کا اثر پوری فورس پر ہوتا ہے اس لئے تمام اہلکار ایسا کوئی بھی عمل یا رویہ نہ اپنائیں جس سے فورس اور ہماری وردی کی بدنامی ہو۔
انہوں نے کہا کہ بلوچستان پولیس دہشت گردی کے خلاف جنگ میں صف اول میں لڑ رہی ہے اور ہمارے ایک سپاہی سے لیکر ڈی آئی جی سطح تک کے افسران نے ملک و قوم کے تحفظ کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ہے، بلوچستان پولیس کے یہ شہداءہماری فورس کی جرات و بہادری کا نشان ہیں جن پر پوری قوم کو فخر ہے۔
انہوں نے کہا کہ فورس کی ان قربانیوں کے تقدس کو برقرار رکھنا ہم سب کی ذمہ داری ہے عوامی مقامات اور روڑ پر کھڑے ہر اہلکار کو اسی عزت و تکریم کی لاج رکھنی ہے جو اس وردی نے ہمیں بخشی ہے۔
ایس ایس پی آپریشن نے عوام سے بھی اپیل کی ہے کہ وہ عوامی خدمت پر معمور اہلکاروں سے تعاون کریں اور معمول کی ڈیوٹی سر انجام دینے والے اہلکاروں سے غیر ضروری طور پر الجھنے کے بجائے قانونی تقاضے ے پورے کریں تاکہ معاشرے میں امن و بھائی چارے کی مثالی فضاءقائم کی جاسکے۔
اے پی پی / محمد بلال /حامد