اسلام آباد۔26مئی  (اے پی پی):وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے امور نوجوانان عثمان ڈار نے کہا ہے کہ نوجوانوں کو اپنا کاروبار شروع کرنے کے لئے سہولتیں فراہم کی جا رہی ہیں، کامیاب جوان پروگرام کے تحت نوجوانوں کو ہنر مند بنایا جارہا ہے، پروگرام میں شفافیت کو یقینی بنایا جا رہا ہے، نوجوانوں کو روزگار دینے کے لئے حکومت آئی ٹی کے شعبہ پر کام کر رہی ہے، حکومت نوجوانوں کی مشاورت سے مختلف پروگرام لا رہی ہے، کورونا وائرس کی وبا کے بحران کے باعث کامیاب جوان پروگرام میں رکاوٹیں آئیں مگر حکومت نے نوجوانوں کی فلاح و بہبود کے لئے منصوبے جاری رکھے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو یہاں کامیاب جوان پروگرام کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ کامیاب جوان پروگرام آن لائن صرف اس لئے رکھا ہے کہ اس میں شفافیت رہے، اس پروگرام میں کوئی بھی مینوئل درخواست نہیں دی جا سکتی، کاروبار کرنے کے لئے ویب سائٹ پر جا کر قرض کے لئے درخواست دی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلی سطح ایک سے دس لاکھ روپے کے قرضے کی تھی جس پر  3 فیصد مارک اپ رکھا گیا، اب قرضہ کی حد کو بڑھا کر 20 لاکھ کیا جا رہا ہے،  کوشش کر رہے ہیں  کہ ایسے نوجوان جن کے پاس ہنر اور تجربہ ہے،کے لئے جولائی کے پہلے ہفتے سے اس کا آغاز کر دیا جائے، اس سے نوجوان اپنا چھوٹا کاروبار شروع کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج جو بڑے برانڈز ہیں انہوں نے چھوٹے پیمانے  پر  کام سے آغاز     کیا تھا، وقت کے ساتھ ساتھ یہ بڑے بڑے برانڈز بنتے گئے۔ انہوں نے نوجوانوں سے کہا کہ آپ نے چھوٹے کاروبار سے آغاز کرنا ہے بڑا  خواب دیکھنا اور لگن کے ساتھ کام کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ اپنے ذہن کو تبدیل کیا جائے کہ کاروبار کی طرف آنا ہے۔ ایسے نوجوان جو یونیورسٹی کی تعلیم حاصل کر چکے ہیں ان کو چاہیے کہ وہ ان پروگراموں سے فائدہ اٹھا کر کاروبار شروع کریں۔ انہوں نے کہا کہ اگر کامیاب جوان پروگرام اگر دس ہزار لوگوں کو چیک دے چکا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ دس ہزار نوجوانوں کو روزگار مل چکا ہے اور وہی دس ہزار نوجوان مزید دس ہزار لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع پیدا کر چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب ڈیش بورڈ کو پبلک کیا جائے تو آپ کو معلوم ہو گا کہ 20 ہزار لوگ ابھی تک براہ راست کامیاب جوان پروگرام سے روزگار حاصل کر چکے ہیں۔ آپ لوگ کامیاب جوان پروگرام کا حصہ بنیں، یونیورسٹی میں تعلیم کے دوران ہی اپنا ذہن بنائیں کہ کاروبار کرنا ہے۔ آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ میری کوشش ہے کہ روزانہ کی بنیادوں پر اعداد و شمار کا جائزہ لیا جائےاور بینکوں کے ساتھ رابطہ  رکھا جاتا ہے تاکہ جن نوجوانوں نے اپلائی کیا ہوا ہے ان کو جلد سے جلد لون مل سکے۔ انہوں نے کہا کہ 20 نوجوانوں کو اسلام آباد میں اپرنٹس شپ کرا رہے ہیں اس  تعداد کو بڑھانا ہے، اس کے علاوہ بہت سے اور منصوبوں پر بھی کام جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی محنت کے نتیجہ میں معیشت میں بہتری آ رہی ہے، ملک کی معیشت جو پہلے تباہ حال تھی اب بہتری کی جانب گامزن ہو چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ کاروبار کے لئے ماحول پیدا کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ میرا خواتین کے لئے پیغام ہے کہ جب تک آپ آگے نہیں بڑھیں گی تو پاکستان ترقی نہیں کر سکتا، جب تک پاکستان کی تعمیر و ترقی میں پاکستان کی بیٹیوں کا حصہ نہیں ہو گا تو پاکستان آگے نہیں جا سکتا۔ وزیراعظم عمران خان نے100 ارب روپے میں سے 25 ارب روپے خواتین کے لئے رکھے ہیں۔