ہنگو، 18 اپریل (اے پی پی):خیبر پختونخواہ کے ضلع ہنگو میں کرونا وائر س سے بچاؤ کے لئے حکومت اور انتظامیہ کی جانب سے حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں،کرونا  سے بچنے کے لئے ضلع بھر کے مختلف مقامات پر قرنطینہ سنٹرز قائم کرنے کے ساتھ ساتھ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں آئسولیشن وارڈ بھی بنا دیا گیا ہے۔ سماجی فاصلوں اور اختیاطی تدابیر کی پیروی کے سلسلے  میں عوام   بھر پور تعاون کر رہی ہے۔

ضلعی انتظامیہ ہنگو کے مطابق کرونا وائر س سے پید ہوانے والے مشکل حالات کے پیش نظر ہسپتالوں میں ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل عملے کی چھٹیاں منسوخ کرنے کے ساتھ ساتھ ہسپتالوں میں ہیلتھ ایمرجنسی  بھی نافذ کی گئی ہے۔ 15مارچ کو صوبہ سندھ سے تبلیغ کے سلسلے میں آئے ہوئے 41 افراد کے ٹیسٹ نمونے لینے پر 8افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے ، 6مریضوں کی رپورٹ منفی آئی جبکہ ایک مریض کو صحتیابی کے بعد ہسپتال سے ڈسچارج کر دیا گیا ہے۔اسی طرح باقی افراد جو قرنطینہ میں موجود ہے اُن کے ٹیسٹ رزلٹ بھی لیبارٹری  میں بھیج دئیے گئے ہیں۔

اسکے علاوہ  تاحال ضلع بھر میں مقامی سطح پر کوئی کیس سامنے نہیں آیاجو کہ خوش آئندہ بات ہے جبکہ دوسری جانب حکومت پاکستان کی ہدایات کے مطابق ملک بھر کی طرح ضلع ہنگو میں بھی  لاک ڈاؤن جاری ہے اور تجارتی مراکز،تعلیمی ادارے، دفاتر سمیت تمام تر پبلک پوائنٹس میں عارضی لاک ڈاون ہے۔ سماجی فاصلوں کے حوالے سے عوامی آگاہی مہم سمیت پبلک ٹرانسپورٹ اور عوامی اجتماعات پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ ضلع بھر میں عارضی لاک ڈاؤن کے دوران معاشی طور پر متاثرہ غریب طبقہ کے مستحقین کو امدادی سامان کی ترسیل میں حکومت،انتظامیہ،سیکورٹی اداروں اور نجی فلاحی اداروں کے ساتھ ساتھ مخیر حضرات نے بھی دل کھول کر لازوال انسانی خدمت کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔

اے پی پی /محمد فخر الاسلام کاکاخیل /قرۃالعین