اسلام آباد، 10اپریل  (اے پی پی): کرونا کی وباء  کے پھیلاؤ کو  روکنے   کیلئے لاک ڈاون کے حکومتی  اعلان  کے  بعد سب اپنے گھروں میں ہیں۔سرکاری اور نجی اداروں نے بھی ورک فرام ہوم کی بات کی ہے اور آن لائن کام کیا جارہا ہے۔تاہم کرونا سے بچنے کے ساتھ ساتھ بوریت سے بھی کیسے بچا جائے؟ایک ایسا سوال ہے جس کا جواب یقیناً ایک نہیں ہے۔مختلف لوگوں کے لئے اس سوال کا جواب مختلف ہوسکتا ہے لیکن کچھ ایسے کام ہیں جو سب کرسکتے ہیں۔

جہاں لوگ ٹی وی ، سوشل میڈیا،یوٍٹیوب،ٹوئٹر،سنیپ چیٹ،وٹس اپ،ٹک ٹاک،فیس بک سے دل کو بہلا رہے ہیں وہیں کچھ لوگ اپنے پسندیدہ مشغلوں میں مصروف ہیں جن میں سر فہرست کھانا پکانا ،سیکھنا اور کتابیں پڑھنا شامل ہے جبکہ تنہائی میں عبادات کے ذریعے اللہ کا قرب حاصل کرنا اور ان حالات میں دیہاڑی دار طبقے کی مدد کرنے میں مصرف رہنا بھی لوگوں کو بور ہونے سے بچانے کا ذریعہ ہے۔

اے پی پی/cdr/قرۃالعین