اسلام آباد۔4جون  (اے پی پی): وزیراعظم  عمران خان نے کہا کہ کورونا وبا کی وجہ سے سیاحت کا شعبہ متاثر ہواتاہم ویکسی نیشن کے بعد اب سیاحت بحال ہو رہی ہے، اس شعبہ سے غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ کر سکتے ہیں، کرنٹ اکائونٹ دبائو ختم کر سکتے ہیں ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو لودھرا ں تا  ملتان شاہراہ کی اپ گریڈیشن و بحالی کے منصوبے کے سنگ بنیاد کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ کورونا وبا کے باوجود شرح نمو 4 فیصد رہی ، بھارت ہمارے مقابلے میں معاشی اعتبار سے بہتر تھا اس کا روپیہ مستحکم تھا ، اس کے زرمبادلہ کے ذخائر مستحکم تھے لیکن ا س کے مقابلہ میں ہم اپنے لوگوں اورمعیشت کو بچانے میں کامیاب رہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مشکل وقت سے نکل گیا ہے۔ 1960 کی دہائی میں پاکستان ایشیا کی چوتھی بڑی معیشت تھا، پھر سے ہم اسی پالیسی پر عمل پیرا ہیں، صنعت اور زراعت کو ترقی دی جارہی ہے۔ زرعی فصلیں تاریخ کی بلندترین سطح پر ہیں، کسانوں کو گنے کی قیمت کی ادائیگی بروقت کرانے سے گنے کی ریکارڈ پیداوار ہوئی ۔

وزیراعظم نے کہا کہ کسانوں کے لئے جو پیکج لارہے ہیں اس سے 60 کی دہائی کا انقلاب ایک بار پھر آئے گا۔ چین کے ساتھ سی پیک کے دوسرے فیز میں صنعت لگ رہی ہے،آئی ٹی پر توجہ مرکوز کی جا رہی ہے۔ پاکستان کی کثیر آبادی نوجوانوں پر مشمل ہے۔ 20 سال پہلے اس شعبہ میں جو کام کرنا چاہیے تھا وہ اب ہم کررہے ہیں۔

 وزیر اعظم نے کہاکہ ملک میں 10 بڑے ڈیم بنا رے ہیں۔ انتخابی سیاست میں فائدہ اٹھانے کی وجہ سے ماضی میں ا س جانب کسی نے توجہ نہیں دی، آنے والی نسلوں کو عالمی حدت سے نکالنے کے لئے 10 ارب درخت اور قومی پارکس بنا رہے ہیں۔انہوں  نے کہا کہ پاکستان میں سیاحت کے وسیع مواقع موجود ہیں۔ 12 موسمیاتی زون ہیں ،ماضی میں جو لوگ لندن میں چھٹیاں اور عیدیں گزارتے تھے انہیں ان نعمتوں کا ادراک نہیں تھا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان سے مشکل وقت گزر گیا ہے۔ اب معیشت کی ترقی، دولت بڑھانے اور روزگار کی فراہمی کا وقت ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں تعمیراتی شعبہ کو سب  سے زیادہ مراعات دی گئی ہیں۔ سیمنٹ کی ریکارڈ فروخت ہوئی ہے۔ نیا پاکستان ہائوسنگ منصوبے  کے لئے بینکوں سے قرضے کی فراہمی کے راستے میں حائل مشکلات دور کی ہیں ۔اب بینکوں کے پاس 60 ارب روپے کے قرض کی ڈیمانڈ آ چکی ہے، ایسے لوگ جو سوچ بھی نہیں سکتے کہ ان کا اپنا گھر ہو گا،اس منصوبے سے کرائے کی رقم قسطوں میں دے کر وہ اپنے گھر کے مالک بنیں گے۔

 وزیراعظم نے کہاکہ بینکو ں سے قرضوں کے علاوہ اس منصوبے کے لئے اور ذرائع بھی متعارف کرا رہے ہیں اس سلسلہ میں وزیرخزانہ شوکت ترین کام کررہے ہیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ تعمیراتی شعبہ سے 30 صنعتیں وابستہ ہیں۔ آنے والے دنوں میں قوم کو مزید خوشخبریاں ملیں گی۔