چترال،18ستمبر(اے پی پی ): گلوبل وارمنگ اور موسمیاتی تبدیلیو ں کے اثرات چترال تک جا پہنچے ،وادری بروغل کے دامن میں واقع گرم  چشمہ گائوں کے پہاڑوں پر صدیوں پرانے برفانی  پگھلنے لگے ہیں ۔ ماحولیاتی آلودگی اور دیگر وجوہات کی بنا پر گزشتہ کچھ عرصہ سے دنیا کے مختلف خطوں کی طرح پاکستان کا موسم بھی تیزی سے تبدیل  ہو رہا ہے ۔ موسمیاتی تبدیلی کے یہ اثرات دور دراز علاقوں کے پہاڑوں تک بھی جا  پہنچے ہیں جہاں صدیوں پرانے گلیشئیر درجہ حرارت بڑھنے کے سبب پگھلنا شروع ہوگئے ہیں ،  چترال کا علاقہ وادی بروغل بھی ایسا ہی ایک مقام ہے جہاں کے گائوں گرم چشمہ کے پہاڑوں سے برف کی سفید چادر اترنے لگ گئی ہے ۔۔۔

آخر ،،، صدیوں پرانے برف سے ڈھکے یہ پہاڑ اب کیسے پگھلنے لگے ہیں ؟ محکمہ موسمیات کے صوبائی ڈائریکٹر مشتاق شاہ  کہتے ہیں درجہ حرارت بڑھنے کی وجہ سے اس عمل کو روکا تو نہیں جاسکتا البتہ کچھ احتیاطی تدابیر اختیار کرکے اس کے نقصانات کو کم سے کم ضرور کیاجاسکتا ہے ۔۔

صدیوں پرانے ان گلیشئیرز کے پگھلنے کی ایک بڑی وجہ یہاں پر موجود جنگلات کی بے دریغ کٹائی بھی ہے ۔۔۔

مقا می افراد نے صوبائی اور وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ  بلین ٹری سونامی کی طرز پر وادی بروغل میں شجرکاری مہم کا آغاز کیا جائے تاکہ صدیوں پرانے ان گلئشئیرز کو بچاکر علاقے کا قدرتی حسن محفوظ کیاجاسکے ۔۔۔

وی این ایس چترال