اسلام آباد، 30اگست(اے پی پی ):ملک بھر کی  طرح اسلام آباد میں  بھی وزیر اعظم عمران خان  کی  کشمیری عوا م  سے یکجہتی  کی کال پر مختلف  جگہوں  پر تقاریب منعقد ہوئیں۔جس کا مقصد  کشمیری عوام کیساتھ  پاکستان کی  یکجہتی کا اظہار کرنا تھا۔

مرکزی تقریب  وزیر اعظم ہاؤس میں  ہوئی  جہاں وزیر اعظم عمران خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کہ   آج    دنیا کو واضع پیغام جائے گا    کہ  جب تک کشمیریوں کو آزادی نہیں ملتی  ،  کشمیریوں کے ساتھ کھڑے رہیں گے ۔ آج سارا  پاکستان   کشمیر یوں کے ساتھ کھڑا ہے   اور کشمیریوں کے دکھ اور درد  میں  برابر کے شریک ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت  کشمیریوں پر ظلم  کر رہی ہے ۔ اس  وقت کشمیر  مشکل وقت سے گزر   رہا ہے ۔ جب بھی مسلمانوں پر ظلم ہوتا ہے  عالمی ادارے خاموش رہتے ہیں۔ آر ایس ایس مسلمانوں کو دوسرے درجے کا شہری بنانا  چاہتی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کسی بھی حالات سےنمٹنے  کے لیے   پاک  فوج مکمل طور پر  تیار ہے ۔

اسی طرح  ایوان صدر کی تقریب  میں صدر مملکت  ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ دنیا بھر کے مسلمانوں کا مشترکہ مسئلہ ہے۔پاکستان کی حکومت اور عوام کشمیریوں کیساتھ کھڑی ہے، ہم متحد رہیں گے تو کشمیر ضرور آزاد ہو گا۔ صدر  مملکت نے کہا کہ  اگر بھارت نے پاکستان پر جنگ مسلط کی تو ہم پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ بھارتی پروپیگنڈے کا ہر سطح پر جواب دینا ہو گا۔ بھارت کی فاشسٹ حکومت کے کنٹرول میں جوہری اسلحہ دنیا کے لئے سنگین خطرہ ہے، دنیا کو بھارت کے فاشسٹ نظریے کو جاننا ہو گا۔

یوم یکجہتی  کشمیر کے موقع پر فیصل مسجد  میں صدر بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی  ڈاکٹر احمد یوسف الدریویش نے  کشمیر کے حوالےسے خصوصی خطبہ  جمعہ دیا اور  کشمیر کی آزادی کیلئے دعا کی۔

وفاقی دارلحکومت کے بچوں نے بھی  یوم یکجہتی کشمیر کی تقریبات میں بڑھ چڑھ  کر حصہ لیا جبکہ مختلف وزارتوں میں  بھی  مقبوضہ کشمیر کی عوام  کیساتھ  اظہار یکجہتی کیلئے خصوصی تقریبات کا انعقاد کیا  گیا۔

یوم یکجہتی کشمیر پر ان تقریبات کے انعقاد کا مقصد دنیا کو  یہ بتانا تھا کہ پاکستانی عوام کشمیری بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑی  ہے  اور  بھارتی مظالم  کے خلاف پورا پاکستان اکھٹا ہے۔

سورس: وی این ایس، اسلام آباد