اسلام آباد ، 01 جون (اے پی پی ): وزیر داخلہ  شیخ  رشید نے کہا ہے کہ  امید ہے کہ اسد طور کے کیس میں حقیقت کے قریب پہنچ جائیں گے۔ نادرا ، ایف آئی اے اور پولیس مل کر اس واقع کی تحقیقات کررہے ہیں۔ اس   تحقیقات  کے لیے فنگر پرنٹس سے بھی مدد لی جا رہی ہے، اگر  اس سے بھی ملزمان کی نشاندہی نہ ہوئی تو اشتہار دیں گے جبکہ  یہ بھی پتہ چلا ہے کہ حملہ کرنے والے پہلے بھی اس عمارت میں آئے تھے، ایک آدمی کی شناخت کے قریب ہیں۔

منگل کو یہاں پریس کانفرنس میں  ان کا کہنا تھا  کہ   اس واقعہ کے ملزمان کو پکڑنا ضروری ہے کیونکہ بعض لوگ غیر ملکی آقائوں کو خوش کرنے کے لئے حساس اداروں کو نشانہ بنارہے ہیں۔ ملزمان کے پکڑے جانے سے ان کے منہ بند ہو جائیں گے جو اپنی کمپنی کی مشہوری کے لئے  بلاوجہ اداروں پر الزام تراشی کررہےہیں۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ حکومت کے لئے اسد طور حملے کے ملزمان پکڑنا اہمیت کا حامل ہے۔  صحافیوں پر حملوں کے واقعات سے حکومت پر سوالیہ نشان اٹھتا اور انسانی حقوق کا مسئلہ بھی بنتا ہے ۔بعض لوگ جن کا مقصد کچھ اور ہوتاہے وہ ایسے واقعات سے فائدہ اٹھاتے ہیں اور اداروں پر الزام لگاتے ہیں۔ ایسے واقعات میں ملو ث افراد کڑی سزا ملنی چاہیے۔ اس حوالے سے پالیسی بننی چاہیے۔