اسلام آباد،10جون  (اے پی پی):وفاقی وزیرخزانہ ومحصولات شوکت ترین نے کہاہے کہ حکومت بجٹ میں    غریب اورتنخواہ دارطبقہ پربوجھ نہیں  بڑھائےگی۔

جمعرات کویہاں قومی اقتصادی سروے 2020-21 کے اجرا کے موقع پر وفاقی وزیرمخدوم خسروبختیار،مشیرتجارت عبدالرزاق داؤد، ڈاکٹرثانیہ نشتر، اورمعاون خصوصی ریونیو ڈاکٹروقار مسعودکے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیرخزانہ نے کہاکہ موڈیز، فچ اورسٹینڈرڈاینڈپورز جیسے بین الاقوامی اداروں نے پاکستان کی کریڈٹ ریٹنگ بہترکی ہے۔پاکستان کے استحکام کا پروگرام بہترہواہے، اب ہمیں بڑھوتری کی طرف جانا ہے، وزیراعظم صاحب کوبھی ہم نے بتایاہے کہ 6سے لیکر7فیصد کی بڑھوتری کے بغیرہم اپنے جوانوں کوروزگارفراہم نہیں کرسکتے جوآبادی کا60 فیصدہے، ہمیں سالانہ روزگارکے 20لاکھ مواقع فراہم کرنا ہے، اس مقصد کیلئے حکومت وقتاً فوقتاً  اقدامات کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ  ہم نے غریب کاخیال رکھناہے کیونکہ پہلے ٹریکل ڈاون کاخواب دکھایاگیاتھا، ٹریکل ڈاون اس وقت کامیاب ہوتاہے جب ترقی اوربڑھوتری پائیدارہوں، پاکستان میں 60کی دہائی کے بعد ایسا دورنہیں آیا جب بڑھوتری میں تسلسل ہوں، حکومت بجٹ میں اس پرتوجہ دے رہی ہے، ہماری کوشش ہے کہ  40لاکھ سے لیکر60لاکھ گھرانوں کی زندگیوں میں آسانیاں لائی جائے، اس مقصد کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں، ہمارا طریقہ کارنیچھے سے اوپر کی طرف ترقی پرمبنی ہوگا۔