اسلام آباد۔4جون  (اے پی پی):وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ عالمی برادری سے اپیل ہے کہ وہ ماحولیاتی تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے کردار ادا کرے، عالمی برادری ماحول اور ایکو نظام کے تحفظ کیلئے اجتماعی کردار ادا کرے، درختوں اور جنگلی حیات کے تحفظ کیلئے 9 قومی پارک بنا رہے ہیں، بلین ٹری منصوبے کے تحت ایک ارب درخت لگا چکے ہیں جبکہ 2023ء تک 10 ارب درخت لگائیں گے۔ وہ جمعہ کو یہاں ماحولیاتی نظام کی بحالی سے متعلق اقوام متحدہ کے عشرے کے موضوع پر ورچوئل تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ یہ ماحولیات کے عالمی دن کی مناسبت سے کانفرنس کی افتتاحی تقریب تھی۔ تقریب سے دنیا کے مختلف ممالک کے سربراہان نے بھی خطاب کیا۔ وزیراعظم نے اپنے خطاب میں کہا کہ آج پاکستان 10 ارب درخت لگانے کے منصوبے کے تحت ایک ارب درخت لگانے کا ہدف حاصل کر چکا ہے۔ یہ پاکستان کا عالمی ماحولیاتی بہتری میں اس کا حصہ ہے، ہم نے قومی پارکس کو بڑھانے کا پرجوش قدم اٹھایا ہے، ہم 9 قومی پارک بنانے جا رہے ہیں یہ پارک بنانے کا مقصد جنگلات کو بڑھانے، درختوں کی حفاظت اور جنگلی حیات کو تحفظ دینا ہے۔ گزشتہ ادوار میں قدرتی مسکن کی عدم دستیابی کی وجہ سے ہماری جنگلی حیات کو نقصان پہنچا۔ وزیراعظم نے کہا کہ مینگروز آکسیجن کا بڑا حصہ جذب کرتے ہیں، ہم مینگروجنگلات کے رقبے کو بڑھانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں۔ وزیراعظم نے کہا کہ پانی کی سطح کو بلند کرنے کیلئے اپنی آب گاہوں کو بحال کرنے کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں، ہمارے ملک میں پانی کی سطح گر رہی ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ کورونا وباء کے دوران ہم نے ماحولیاتی اقدامات سے 80 ہزار گرین روزگار کے مواقع پیدا کئے، دیہی خواتین اور نوجوانوں کو اس سے روزگار ملا۔ وزیراعظم نے دنیا سے اپیل کی کہ وہ ماحولیاتی تحفظ کیلئے آگے آئے اور درخت لگائے تاکہ اپنی آنے والی نسلوں کیلئے ماحولیات کو تحفظ دیا جا سکے۔ وزیراعظم نے کہا کہ میرے لئے یہ خوشی کا دن ہے کہ بلین ٹری منصوبہ شروع کیا ہے یہ منصوبہ اقوام متحدہ کی ایکونظام کی بحالی کے عشرے کا حصہ ہے۔ اس کے تحت ہم نے ایک ارب درخت لگا لئے ہیں جبکہ ہمارا ہدف 10 ارب درخت لگانا ہے۔ وزیراعظم نے  کہا کہ عالمی برادری ماحولیات اور ایکو نظام کے تحفظ کیلئے اجتماعی کردار ادا کرے۔