لاہور 3 جون(اے پی پی): معاون خصوصی وزیر اعلیٰ پنجاب برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق عوان نے صوبائی کابینہ کے حوالے سے اہم پریس کانفرنس کی۔ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یکم جون سے 60 لاکھ 21 ہزار 567 صوبائی ملازمین کو 25 فیصد الاؤنس دیا جائے گا اور پنجاب حکومت نے اس سلسلے میں سالانہ 4 ارب روپے  مختص کیے ہیں، کابینہ کی طرف سے ساہیوال اور ڈی جی خان کے لیے یونیورسل ہیلتھ سکیم کی منظوری دے دی گئی ہے،سات اضلاع کے شہریوں کو مفت صحت کی سہولیات دینے کے لیے 7.1 ارب روپے کی منظوری دے دی گئی ہے, اس سال کے آخر تک پنجاب کے دو کروڑ 92 لاکھ خاندانوں کو صحت کارڈ تقسیم کر دیئے جائیں گے, قدرتی آفات کے شکار اضلاع کی مالی امداد کی منظوری کا فیصلہ کیا گیا ہےاور  کابینہ نے بورڈ آف ریونیو ایکٹ 1957 میں ترامیم کی منظوری دے  بھی دی ہے۔

انہوں نے کہا پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی کے ڈائریکٹر کے کنٹریکٹ میں توسیع کی سمری منظور کر لی گئی ہے جبکہ پنجاب آرمز رولز 2017 کی منظوری دی گئی ہے اس سے اصلحہ کے ٹرانسفر  کے اختیارات ضلع کے ڈی سی کے پاس ہوں گے، پنجاب گرین بیلٹ پروگرام کے تحت 5 سال چلنے کے بعد گاڑیوں کو فٹنس سرٹیفکیٹ حاصل کرنا ہوگا، ٹریفک حادثات میں کمی لانے کے لیے لیے تین ویل رکشہ کو ٹریفک قوانین کے ساتھ جوڑا ہے، پنجاب موٹر وہیکل ایکٹ 1969 اور اور پنجاب موٹر سائیکل ٹرانزیکشن رول 2015 کے تحت صحت بائیو میٹرک رجسٹریشن و فروخت اور  ارجنٹ پروسیسنگ فیس متعارف کروائی گئی ہے، کرائم کی شرح کو کم کرنے کے لیے موٹر سائیکل کی جسٹریشن اور خریدوفروخت کو بائیو میٹرک کے ساتھ جوڑا گیا ہے۔

فردوس عاشق عوان نے کہا نیٹ میٹرنگ کیسس کے فیصلے جلد کیے جائیں گے، محکمہ سوشل ویلفیئر کے کے 222 ملازمین کو بذریعہ ایف پی ایس سی ریگولر کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے، چنیوٹ میں جوڈیشل کمپلیکس  بنانے کے لیے 654  کنال اراضی کی منتقلی کی منظوری بھی دی گئی ہے، آنے والی نسلوں کے بہتر مستقبل کا تحفظ ہماری آئینی اور قانونی ذمہ داری ہے، حکومت سندھ سیاست کی بجائے مسائل حل کرنے کے لیے حکومت پنجاب کے ساتھ مل کر کام کرے، پی ڈی ایم قصہ پارینہ بن چکی ہے، اپوزیشن عوام میں انتشار اور فساد پھیلانے میں کامیاب نہیں ہو پائے گی، بجٹ میں چیلنجز اور اچھی باتیں عوام کے سامنے رکھیں گے یہ بجٹ عوام دوست اور عوام کے غموں کا مداوا کرے گا۔